Three-Year-old Kashmiri baby wailing at the body of his grandfather

بھارت کے زیر انتظام کشمیر کے شمالی ضلع بارہ مولہ کے ماڈل ٹاؤن سوپور میں بدھ کی صبح بھارتی نیم فوجی سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف)کے اہلکاروں اور کشمیری مجاہدین کے درمیان فائرنگ کے تبادلے کے بعد بھارتی سیکورٹی فورسز نے ایک راہ چلتے عام شہری مار ڈالا، جبکہ ان کا تین سالہ نواسہ بچ گیا۔

شہید ہونے والے شہری کی شناخت سری نگر کے مضافاتی علاقے مصطفیٰ کالونی ایچ ایم ٹی کے رہنے والے بشیر احمد خان ولد غلام محمد خان کے نام سے ہوئی ہے۔ جبکہ اس بچے کا نام عیاد بتایا گیا۔

مذکورہ شہری کے اہل خانہ کا کہنا ہے کہ بشیر احمد عسکریت پسندوں کی نہیں بلکہ سکیورٹی فورسز کی گولیوں کا نشانہ بنے۔

ایچ ایم ٹی سے ایک صحافی نے بتایا: ‘ہمیں اہل خانہ سے معلوم ہوا کہ بشیر احمد پیشے کے اعتبار سے ایک ٹھیکے دار تھے۔ وہ اپنے تین سالہ نواسے عیاد جہانگیر کو اپنے ساتھ لے کر سوپور میں تعمیراتی سائٹ پر جارہے تھے۔ اہل خانہ نے الزام عائد کیا ہے کہ ان کو سکیورٹی فورسز نے قتل کیا ہے۔’

کشمیر: نانا کی لاش پر بیٹھے روتے بلکتے بچے نے دنیا کو لرزا دیاسوپور میں بھارتی نیم فوجی سینٹرل ریزرو پولیس فورس کے…

Posted by Independent Urdu on Wednesday, July 1, 2020
Video of Three-Year-old Kashmiri baby

ایک ویڈیو میں بشیر احمد کے ایک بیٹے کو یہ کہتے ہوئے سنا جاسکتا ہے: ‘وہ صبح چھ بجے گھر سے نکلے۔ ان کا سوپور میں کام چل رہا تھا۔ وہاں فائرنگ شروع ہوئی اور سی آر پی ایف نے ان کو گاڑی سے اتار کر مار ڈالا’۔

Three-Year-old Kashmiri baby Ayyad

سی آر پی ایف کے ترجمان جنید خان نے اردو نیوز کو بتایا: ‘ماڈل ٹاؤن سوپور میں بدھ کی صبح عسکریت پسندوں نے 179 بٹالین سی آر پی ایف کی ایک ناکہ پارٹی پر اندھا دھند فائرنگ کی جس میں ہمارا ایک جوان مارا گیا جبکہ دیگر تین زخمی ہوئے جنہیں طبی امداد کے لیے سری نگر میں قائم فوجی ہسپتال منتقل کیا گیا ہے۔’

ان کا مزید کہنا تھا: ‘حملہ آور فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ہیں جنہیں ڈھونڈنے کے لیے بڑے پیمانے پر سرچ آپریشن شروع کردیا گیا ہے۔’

سی آر پی ایف کے دوسرے ایک ترجمان پنکج سنگھ سے جب اردو نیوز نے پوچھا کہ عام شہری کی ہلاکت کیسے واقع ہوئی تو ان کا کہنا تھا: ‘میرے لیے یہ کہنا مشکل ہے۔ آپ کراس فائرنگ لکھ سکتے ہیں’۔

Leave a Reply