Saira warsak road Peshawar

آج بروز بدھ،مورخہ 8 جولائی کی صبح سے سوشل میڈیا پہ ایک خبر وائرل ہوئی جس میں دعوی کیا گیا کہ پشاور، ورسک روڈ بابو گڑھی میں تین نوجوانوں نے سائرہ نامی معصوم بچی کو زیادتی کے بعد قتل کر دیا۔ پشاور یونیورسٹی کے آفیشل پیج کے علاوہ بہت سارے تصدیق شدہ ٹوئیٹر اکاؤنٹس نے بھی افواہ وائرل کی۔

بہت سارے سوشل میڈیا صارفین نے بچی کی تصویر کے علاوہ تین نوجوان لڑکوں کی تصاویر بھی شیئر کیں اور دعوی کیا کہ ان تین لڑکوں نے سائرہ کو زیادتی کا نشانہ بنا کر قتل کیا۔

لیکن اصل حقائق مختلف نکلے۔ بچی کی تصاویر اور قتل کی افواہ وائرل ہونے کے بعد ہماری ٹیم نے ورسک روڈ پہ موجود سائرہ کے والد سے رابطہ کیا۔ جنہوں نے سائرہ کے ساتھ زیادتی اور قتل کی افواہ کو جھوٹ قرار دیا۔

video: Father of Saira Denies the viral news of Saira’s murder.

بچی کے والد نے روتے ہوئے کہا کہ اس جھوٹی افواہ کے ذریعے ان کی بچی کو بدنام کیا جا رہا ہے۔ اور ایسی افواہ پھیلانے والوں کے خلاف وہ قانونی کاروائی کا ارادہ بھی رکھتے ہیں۔

Leave a Reply