گجرانوالہ: طلحہ مشتاق نامی چودہ سالہ بچی جو قرآن کی تعلیم حاصل کرنے ہمسائیوں کے گھر جاتی تھی، کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا، اور جنسی زیادتی کے بعد ازالے کے طور پہ نکاح کر کے سارے گھر کے مرد زیادتی کرنے لگے۔

Video Via Daily Pakistan with thanks

تفصیلات کے مطابق گجرانوالہ سے تعلق رکھنے والے مشتاق کی کشمیر میں حجام کی دکان ہے۔ انکی چودہ سالہ بیٹی طلحہ مشتاق ہمسائے میں سیما نامی خاتون کے پاس قرآن کی تعلیم حاصل کرنے جاتی تھی۔

سیما نامی استانی نے بچی کو اپنے چچا کے گھر صفائی ستھرائی کرنے بھیجنا شروع کر دیا۔ جہاں پہ عثمان نامی شخص نے بچی کو زیادتی کا نشانہ بنا دیا۔

بات کھلنے کے بعد عثمان نامی شخص نے اپنی غلطی کے ازالے کے لیے طلحہ مشتاق کے والد سے نکاح کی درخواست کی۔

نکاح ہو جانے کے بعد عثمان، اس کے چچا اشفاق اور کزن ابوبکر تینوں مل کر 15 دن تک لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بناتے رہے اور اس کے بعد طلاق دے دی۔

مشتاق نے اپنی بچی کیلئے انصاف کی اپیل کی ہے اور انصاف نہ ملنے کی صورت میں خودسوزی کی دھمکی دی ہے۔

Leave a Reply